میڈیا، سوشل میڈیا کیخلاف کریک ڈاؤن شروع، ڈاکٹرشاہد مسعود کا پیغام

ابتدا مجھ سے ہوئی، لیکن تمام ساتھیوں کوخبردارکرتا ہوں کہ ملکی حالات کے پیش نظرآج کےبعد میڈیا اورسوشل میڈیا کیخلاف کریک ڈاؤن شروع ہوجائیگا، میڈیا کے ساتھیوں سے آمدن اوراثاثو ں کے بارے پوچھ گچھ کی جائےگی۔ عدالت میں پیشی کےدوران مختصرگفتگو

اسلام آباد( روزنامہ سماج) سینئر تجزیہ کار ڈاکٹر شاہد مسعود نے میڈیا اور سوشل میڈیا کو خبردار کیا ہے کہ آج کے بعد پاکستان میں میڈیا اور سوشل میڈیا کیخلاف کریک ڈاؤن شروع ہوجائے گا، ابتدا مجھ سے ہوئی ہے میڈیا میں کام کرنے والے تمام ساتھیوں سے آمدن اور اثاثو ں کے بارے پوچھ گچھ کی جائے گی۔ انہوں نے آج یہاں میڈیا سے مختصر گفتگو کرتے ہوئے پیغام دیا ہے کہ میرا اپنے ساتھیوں اور دوستوں کو پیغام ہے چاہے وہ میری بات سے اتفاق کریں یا اختلاف کریں ، ایک بات ذہن میں رکھیں کہ یہ میرا اپنا تاثر ہے غلط بھی ہوسکتا ہے۔
آج کے بعد پاکستان میں میڈیا کیخلاف کریک ڈاؤن شروع ہوجائے گا۔مجھ پر پی ٹی وی میں آمدن سے زائد اثاثوں کا الزام ہے۔ ابتدا مجھ سے ہوئی ہے میڈیا میں کام کرنے والے تمام ساتھیوں سے آمدن اور اثاثو ں کے بارے پوچھ گچھ کی جائے گی۔
اسی طرح یہ بھی ذہن میں رکھیں کہ ملک کے جس طرح کے حالات ہیں یہ بات ذہن میں رکھیں سوشل میڈیا پر بھی کریک ڈاؤن شروع ہوجائے گا۔
دوسری جانب سینئر سول جج نے پی ٹی وی کرپشن کیس میں اینکر پرسن ڈاکٹر شاہد مسعود کو 5 روزہ جسمانی ریمانڈ پر فیڈرل انویسٹی گیشن ایجنسی (ایف آئی ای) کی تحویل میں دیدیا۔ واضح رہے کہ پی ٹی وی کرپشن کیس کی سماعت کرنے والی اسلام آباد کی بینکنگ کورٹ نے 25 اکتوبر کو شاہد مسعود کی ضمانت قبل از گرفتاری خارج کردی تھی جس کے بعد ٹی وی اینکر گرفتاری کے خوف سے عدالت سے فرار ہوگئے تھے، تاہم گذشتہ روز ایف آئی اے نے انہیں اسلام آباد ہائیکورٹ کے باہر سے گرفتار کرلیا۔
سابق ایم ڈی پی ٹی وی ڈاکٹر شاہد مسعود کو آج ایف آئی اے نے اسلام آباد میں سینئر سول جج عامر عزیز کی عدالت میں پیش کیا۔ایف آئی کی جانب سے ڈاکٹر شاہد مسعود کے 10 روزہ جسمانی ریمانڈ کی استدعا کی گئی تاہم ملزم کے وکیل شاہ خاور نے طویل جسمانی ریمانڈ کی مخالفت کرتے ہوئے کہا کہ 24 گھنٹے کا ریمانڈ کافی ہے ،ْاس سے زیادہ نہ دیا جائے۔دوران سماعت جج نے ایف آئی اے سے استفسار کیا کہ کیا آپ نے انکوائری کرلی ہی جس پر ایف آئی اے حکام نے جوبا دیا کہ ملزم نے خود سرینڈر نہیں کیا تھا لہذا کافی چیزیں باقی ہیں۔
سینئر سول جج نے استفسار کیا کہ کیا یہ پہلا ریمانڈ ہے یا اس سے پہلے بھی لیا گیا ہی ایف آئی اے حکام نے جواب دیا کہ یہ پہلا ریمانڈ ہے، ملزم کو گزشتہ روز ضمانت خارج ہونے پر اسلام آباد ہائیکورٹ سے گرفتار کیا گیا ہے۔اس موقع پر پی ٹی وی کے وکیل نے عدالت کے روبرو کہا کہ ہائیکورٹ نے ملزم کے حوالے سے کچھ ہدایات دی ہیں، ان کو بھی دیکھ لیں۔
پی ٹی وی کے وکیل نے ہائیکورٹ کے ریکارڈ کی دستاویزات بھی عدالت میں پیش کر دیں۔فریقین کے دلائل سننے کے بعد سینئر سول جج عامر عزیز نے ڈاکٹر شاہد مسعود کا 5 روزہ جسمانی ریمانڈ منظور کرتے ہوئے ایف آئی اے سے آئندہ سماعت پر تفتیش میں پیش رفت سے متعلق رپورٹ طلب کرلی۔عدالت نے ملزم کا طبی معائنہ کرانے کا بھی حکم دیا اور ہدایت کی کہ آئندہ سماعت پر ملزم کی میڈیکل رپورٹ بھی پیش کی جائے۔عدالت نے ڈاکٹر شاہد مسعود کو 28 نومبر کو دوبارہ عدالت کے سامنے پیش کرنے کا حکم دیتے ہوئے سماعت ملتوی کردی۔

Share

اپنا تبصرہ بھیجیں