نامعلوم افراد کی فائرنگ، ایم کیو ایم کے سابق رہنما علی رضا عابدی جان کی بازی ہار گئے

کراچی (ڈیلی سماج آن لائن)خیابان اتحاد میں نامعلوم افراد کی فائرنگ سے زخمی ہونے والے ایم کیو ایم کے سابق رہنما علی رضا عابدی جاں بحق ہوگئے۔

پولیس کے مطابق جب سابق ایم این اے علی رضا عابدی کی گاڑی پر فائرنگ کی گئی اس وقت وہ خیابان اتحاد میں اپنے گھر کے پاس ہی موجود تھے ۔ علی رضا عابدی خود گاڑی چلارہے تھے کہ اسی دوران نامعلوم موٹرسائیکل سوار پیچھے سے آئے اور اندھا دھند فائرنگ شروع کردی۔ فائرنگ کے نتیجے میں علی رضا عابدی شدید زخمی ہوگئے۔ نامعلوم حملہ آور فائرنگ کرکے موقع سے فرار ہوگئے۔

حملے کی اطلاع ملتے ہی پولیس کی بھاری نفری علی رضا عابدی کے گھر پہنچ گئی اور علاقے کی ناکہ بندی کردی۔ ایم کیو ایم کے سابق رہنما کو انتہائی تشویشناک حالت میں جناح ہسپتال منتقل کیا گیاجہاں طبی امداد کے دوران وہ جاں بحق ہوگئے۔ ہسپتال ذرائع کا کہنا ہے کہ علی رضا عابدی کو مجموعی طور پر 4 گولیاں لگیں۔ انہیں سر اور گردن میں 2، 2 گولیاں لگی تھیں۔ ہسپتال ذرائع نے بتایا کہ جب علی رضا عابدی کو ہسپتال لایا گیا تو وہ اس سے پہلے ہی جاں بحق ہوچکے تھے ۔

ڈی آئی جی ساؤتھ کا کہنا ہے کہ علی رضا عابدی پر فائرنگ اس وقت کی گئی جب وہ گھر داخل ہونے والے تھے۔ واقعہ ٹارگٹڈ کارروائی لگتا ہے جس کی تحقیقات کی جارہی ہیں۔ دوسری جانب آئی جی سندھ سید کلیم امام نے ڈی آئی جی ساؤتھ سے واقعے کی رپورٹ طلب کرلی ہے۔

Share

اپنا تبصرہ بھیجیں